خواب ذدہ ۔ ۲

میرے غیر مطبوعہ ناول ‘‘خواب ذدہ’’ سے ایک اقتباس۔

______________________________

  ۔ ” وہ ایک سرد شام تھی۔ اٹلی کی تاریخ کی سب سے سرد شام، جب آسمان سے اس قدر برف گری کہ ھم اسے خداوند کا عذاب سمجھنے لگے۔ گلیاں سنسان ھوگئیں، اور سڑکوں پر برف کے پہاڑ اگ آئے۔ اسی رات بادشاہ نے رقص کا مقابلہ منعقد کروایا ھوا تھا۔ ھمیں یقین تھا کہ پچھلے برس کی طرح، اس بار بھی سارہ ھی فتح یاب ھوگی، مگر۔۔۔ آخری وقت پر سارہ نے رقص سے انکار کردیا۔” یوروف کہتے کہتے رک گیا۔

۔ ” وہ کیوں؟” میں نے بے صبری سے پوچھا۔۔۔

۔ ” کوئی نہیں جانتا کہ اس نے ایسا کیوں کیا، مگر اس روز کے بعد سے اس نے لوگوں کے خواب سننا بھی چھوڑ دئیے۔” یوروف نے قہوہ کی پیالی میز پر رکھتے ھوئے کہا اور اپنی جیب  ٹٹولنے لگا۔

Snow dance

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s